شری پرم ہنس جی مہاراج کی سمادھی کی بحالی حق کی فتح ہے- ڈاکٹر رمیش کمار ونکوانی

93

اسلام آباد /کراچی (5مئی2015ء): پاکستان ہندوکونسل کے سرپرستِ اعلیٰ اور ممبر قومی اسمبلی ڈاکٹر رمیش کمار ونکوانی نے خیبرپختونخواہ کی صوبائی حکومت کی جانب سے سپریم کورٹ میں پیش کردہ رپورٹ میں اظہاراطمنان کیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ ضلع کرک میں واقع ہندوؤں کے مقدس مقام شری پرم ہنس جی مہاراج کی سمادھی کا ناجائز قبضہ واگزار کراکر بحالی کا کام کامیابی سے شروع ہوگیا ہے۔منگل کے روز ایڈیشنل ایڈوکیٹ جنرل کے پی کے وقار احمد خان نے عدالتِ عظمیٰ کو رپورٹ پیش کی،ڈپٹی کمشنر کرک کی جانب سے دستخط کردہ رپورٹ میں یقین دہانی کرائی گئی ہے کہ سپریم کورٹ کے یکم مئی 2015کے احکامات کی روشنی میں ضلعی انتظامیہ کی نگرانی میں پولیس کی بھاری نفری کی موجودگی میں ہندو سمادھی کو حفاظت میں لے لیا ہے۔ بعدازاں، ڈاکٹر رمیش ونکوانی نے سپریم کورٹ کے باہرصحافیوں سے گفتگو میں اس اقدام کو حق کی فتح قرار دیتے ہوئے امید ظاہرکی کہ سمادھی کو عنقریب یاتریوں کیلئے کھول دیا جائے گااور اس سلسلے میں جلد ہی پاکستان ہندوکونسل کا وفد صورتحال کا جائزہ لینے کیلئے دورہ کرے گا۔ڈاکٹر رمیش کا کہنا تھا کہ اقلیتوں پر مظالم ملک کو لاحق اندرونی خطرات کاشاخسانہ ہیں اور معاشرے میں بگاڑ، تشدد اور فریسٹریشن کا سبب بن رہے ہیں، سپریم کورٹ کی گزشتہ سماعت میں صوبائی حکومت کو سمادھی کی بحالی کے حوالے سے رپورٹ پیش کرنے کیلئے پندرہ دن کی مہلت دی تھی۔

Load More Related Articles
Load More By PHC
Load More In اردو - URDU

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Check Also

The News International (21 July, 2017)