ڈاکٹر رمیش کمار ونکوانی کی سپریم کورٹ کے باہر صحافیوں سے گفتگو

138

اسلام آباد (19جون 2015ء): پاکستان ہندوکونسل کے سرپرست اعلیٰ اور ممبرقومی اسمبلی ڈاکٹر رمیش کمار ونکوانی نے ہندو اور اقلیتی باشندوں کو تحفظ فراہم نہ کرسکنے پر حکومتِ خیبر پختونخواہ اور سندھ کو کڑی تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا ہے کہ دونوں صوبوں کی انتظامیہ سپریم کورٹ کے اقلیتوں کو تحفظ فراہم کرانے کے احکامات کے نفاذ میں مکمل ناکام ہوچکی ہیں، ناکامی چھپانے کیلئے اعلیٰ عدلیہ کو بے بنیاد رپورٹس جمع کراکر گمراہ کیا جارہا ہے۔جمعے کے روز سپریم کورٹ اسلام آباد کے باہر صحافیوں سے گفتگو میں ڈاکٹر رمیش کمار ونکوانی نے اپنے حالیہ دورہ خیبرپختونخواہ کی تفصیلات سے آگاہ کرتے ہوئے بتایا کہ کے پی کے حکومت نے گزشتہ سماعتوں کے دوران عدالتِ عالیہ کو تحریری رپورٹ پیش کی تھی کہ ضلع کرک کے شہر تیرئی میں شری پرم ہنس جی مہاراج کا ناجائز قبضہ واگزار کراکر تعمیرنو کا کام جاری کردیا گیا ہے، جس پر پاکستان ہندوکونسل نے اطمینان کا اظہار کیا تھا لیکن ہندو وفد کے دورہ خیبرپختونخواہ میں یہ افسوسناک حقیقت سامنے آئی کہ کسی قسم کا کوئی تعمیراتی کام جاری نہیں، سمادھی اور ملحقہ کرشن دوارہ مندر پرمقامی مولوی افتخار کا قبضہ بدستورقائم ہے، سمادھی کا کمرہ سیل کردیا گیا ہے اور ہندوؤں کا داخلہ بند ہے،خیبرپختونخواہ حکومت کی جانب سے سپریم کورٹ میں پیش کردہ رپورٹ جھوٹ کا پلندہ ثابت ہوئی، ڈاکٹر رمیش کا کہنا تھا کہ سپریم کورٹ نے 19جون2014ء کے تفصیلی حکمنامے، بعدازاں 25نومبر، 16دسمبر، 13جنوری، 11فروری، 12مارچ، 16اپریل اور بالآخر 16مئی کو متعد بار صوبائی حکومتوں کو اقلیتوں کا تحفظ یقینی بنانے کا پابند کیا تھا جس میں صوبائی انتظامیہ کی جانب سے کوئی مثبت پیش رفت دیکھنے میں نہیں آئی ۔صوبہ سندھ میں اقلیتوں کے تحفظ کی صورتحال پر تبصرہ کرتے ہوئے ڈاکٹر رمیش ونکوانی نے کہا کہ مندروں کے خلاف حملوں کا سلسلہ رکا نہیں، سندھ حکومت کی جانب سے سیکیورٹی پلان پر عمدرآمد نہ ہونا اسکی بنیادی وجہ ہے، انہوں نے بتایا کہ حال ہی میں حیدر آباد میں سرکٹ ہاؤس میں قائم ماتا مندر پرحملے کا قابلِ مذمت واقعہ پیش آیا ہے ، انہی افسوسناک صورتحال کی بناء پر سپریم کورٹ میں عنقریب پٹیشن دائر کی جارہی ہے جس میں صوبہ سندھ اور خیبرپختونخواہ کے چیف سیکرٹریز اور آئی جی خیبرپختونخواہ سے جواب طلبی کی استدعا کی جائے گی۔ اس موقع پر انہوں نے ماہ رمضان کی مبارکباد دیتے ہوئے اپیل کی کہ انسانیت اور بھائی چارے پرمبنی پرامن فضا قائم کرکے ملک و قوم کی بہتری کیلئے مختلف مذاہب کے ماننے والوں کے مابین نفرت کا سلسلہ ترک کرکے باہمی تعاون کو فروغ دیا جائے۔

Load More Related Articles
Load More By PHC
Load More In اردو - URDU

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Check Also

Disaster reduction by Dr Ramesh Kumar Vankwani

Every year on October 13, the world observes the International Day for Natural Disaster Re…