اسلامی جمہوریہ پاکستان میں سال کے تمام دن شراب پر پابندی ہونی چاہیے، ڈاکٹر رمیش کمار ونکوانی

28

کراچی /اسلام آباد (19اکتوبر2016 ؁ء): پاکستان میں ہندو برادری کی ملک گیر نمائندہ تنظیم پاکستان ہندو کونسل کے سرپرست اعلیٰ اور ممبر قومی اسمبلی مسلم لیگ (ن ) ڈاکٹر رمیش کمار ونکوانی نے چیف جسٹس سندھ ہائیکورٹ کی جانب سے سندھ بھر میں تمام شراب خانے فوری طور پر بند کرنے کے حکم کو خوش آئند قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان ہندوکونسل ملک بھر میں اقلیتوں کے نام پر شراب کی خریدوفروخت کی سخت مخالف ہے، انہوں نے ہندوکمیونٹی کی جانب سے اپنے بھرپور تعاون کی یقین دہانی کراتے ہوئے کہا کہ پاکستان میں شراب و فروخت کیلئے ہندو دھرم اور دیگر مذاہب کا نام استعمال کیا جاتا ہے جوکہ دیگر مذاہب کے ماننے والوں کی سراسر توہین ہے۔

ڈاکٹر رمیش کمار ونکوانی نے چیف جسٹس کے ریمارکس کی تائید کرتے ہوئے کہا کہ شراب صحت کے لیے مضر ہے اور دنیا کا ہر مذہب شراب کے استعمال کو ممنوع قرار دیتا ہے، ہندوؤں اور کرسچن کا محض نام ہے پسِ منظرشراب کے کاروبار کی اصل کہانی کچھ اور ہے ۔ ڈاکٹر رمیش کمار ونکوانی نے ہندو دھرم کی مذہبی کتاب شری مد بھگواتھ پرن کے اشکنڈ دوسرا ، ادھیا سترہ ، شلوک اڑتیس ، انتالیس ، چالیس ، اکتالیس کا حوالہ دیتے ہو ئے کہا کہ ہندو دھرم میں شراب نوشی منع ہے اور نیتاؤں (لیڈران)نے چونکہ قوم کے فیصلے کرنے ہوتے ہیں ، اِس لیے نیتاؤں کو توکِسی صورت شراب نوشی جائز نہیں۔

ڈاکٹر رمیش کمارونکوانی نے کہا کہ پاکستان ایک اسلامی مملکت ہے، قرآن پاک میں بھی شراب کو ام الخبائث یعنی تمام برائیوں کی جڑ کہاگیا ہے۔ ڈاکٹر رمیش کمار ونکوانی نے آگاہ کیا کہ انہوں نے گزشتہ سال شراب کے دھندے کے خلاف بل قومی اسمبلی کو پیش کیا تھا جس میں غیرمسلموں کے نام پر شراب کی خرید و فروخت پر پابندی کا مطالبہ کیا گیا تھا جو کہ مسترد ہو گیا ۔

ڈاکٹر رمیش ونکوانی نے عدالت کے ہولی دیوالی اور کرسمس سے صرف پانچ دن پہلے شراب اقلیتوں کو فراہم کرنے کی اجازت کے حوالے سے کہا کہ اسلامی جمہوریہ پاکستان میں سال کے بارہ مہینے اور 365دن شراب کی پابندی ہونی چاہیے اور اِس سلسلے میں وہ پاکستانی ہندو کمیونٹی کا موقف سندھ ہائی کورٹ کے سامنے پیش کرنے کے بھی خواہاں ہیں، انہوں نے اظہارِ تشویش کیا کہ ہر سال سینکڑوں قیمتی جانیں مذہبی تہواروں کے موقع پر کچی شراب نوشی کی بناء پر ضائع ہوجاتی ہیں

Load More Related Articles
Load More By PHC
Load More In اردو - URDU

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Check Also

Daily Jang Karachi (March 23, 2017)