پشاور میں مندر مسماری سے ہندو کمیونٹی کی دِل آزاری ہوئی ہے

141

کراچی /پشاور (9نومبر2016 ؁ء): پاکستان ہندو کونسل کے سرپرست اعلیٰ اور ممبر قومی اسمبلی ڈاکٹر رمیش کمار ونکوانی نے پشاور میں ایک ہندو مندر مسمار کرنے کی خبر پر سخت تشویش کا اظہار کیا ہے،ڈاکٹر رمیش کمار کا کہنا تھا کہ یہ خیبر پختونخوا کی صوبائی حکومت کی ذمہ داری ہے کہ وہ اقلیتوں کی عبادت گاہوں کی حفاظت یقینی بنائے۔جب صوبائی حکومت اور پشاور کی ضلعی انتظامیہ نے محلہ ونگڑی گراں میں موجود مندر والی جگہ پر پلازہ کا کام روک دیا تھا تو یہ کیسے ممکن ہے کہ وہاں پھر سے تعمیراتی کام شروع ہو گیا، صوبائی حکومت کو معاملہ کی سنگینی کا خیال کرتے ہوئے ذمہ دارانہ رویہ اپنانا چاہیے، تاکہ یہ معاملہ عدالت میں التوا کا شکار نہ ہو۔ڈاکٹر رمیش کمار ونکوانی کا کہنا تھا کہ دنیا کا کوئی بھی مذہب عبادت گاہوں کو مسمار کرنے کی اجازت نہیں دیتا اور پاکستان کا آئین خود اقلیتوں کو مذہبی آزادی فراہم کرتا ہے ، انہوں نے اظہارِ افسوس کیا کہ پشاور میں مندر کو مسمار کر کے اس پر پلازہ تعمیر کرنے کی وجہ سے ہندو برادری کی دل آزاری ہوئی ہے اور وہ پھر سے عدم تحفظ کا شکار ہو گئے۔ ڈاکٹر رمیش کمار ونکوانی نے کہا کہ اگر صوبائی حکومت نے پشاور کے مندر کا معاملہ احسن طریقے سے نہ سلجھایا تو پاکستان ہندو کونسل احتجاج کا حق استعمال کرے گی۔

Load More Related Articles
Load More By PHC
Load More In اردو - URDU

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Check Also

Sindhi Newspaper Jeajal (24 April, 2017)