ڈاکٹر رمیش کمار ونکوانی نے قومی اسمبلی میں بل برائے آئینی ترامیم پیش کردیا

393

اسلام آباد (21اکتوبر2014ء): پاکستان مسلم لیگ (ن) کے اقلیتی راہنماء ڈاکٹر رمیش کمار ونکوانی نے قومی اسمبلی میں آئینِ پاکستان کے آرٹیکل 51میں ترمیم کیلئے بل متعارف کرادیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق ڈاکٹر رمیش کمار، جو کہ پاکستان ہندو کونسل کے سرپرستِ اعلیٰ بھی ہیں، نے اقلیتوں کو دوہرے ووٹ کا حق دینے کے ساتھ مخصوص نشستوں میں اضافے کے حوالے سے پیش کردہ بل کے متعلق قومی اسمبلی کے اجلاس میں کہا کہ 2002ء ؁ میں جنرل نشستوں کی تعداد 207 سے272کردی گئیں لیکن اقلیتی مخصوص نشستوں کی تعداد10ہی رہی، اقلیتی کمیونٹی کو دہرے ووٹ کا حق دیا جائے تاکہ جائز وحقیقی نمائندے منتخب ہوکراسمبلی میں قانون سازی میں اپنا بھرپور کردار ادا کریں ۔

ڈاکٹر رمیش نے اردن، لبنان، بھارت اور نیوزی لینڈ کی مثال دیتے ہوئے کہا کہ وہاں مذہبی ودیگر اقلیتوں کوبذریعہ ڈائریکٹ ووٹ اپنے نمائندے منتخب کرنے کا حق حاصل ہے جبکہ پاکستان میں اقلیتوں کو جیتنے والی پارٹی کے رحم و کرم پر چھوڑ دیاگیا ہے کہ وہ اپنی پسند ناپسند کی بناء پر اقلیتوں کی نمائندگی کیلئے امیدوار نامزد کریں جس پر اقلیتی کمیونٹی کو تحفظات ہیں۔

اس موقع پر ڈاکٹر رمیش کمار نے عبدالستارایدھی کی فلاحی خدمات کو بھی خراجِ تحسین پیش کیا اور انکے حق میں متفقہ طور پر قرارداد منظور کرنے کی تجویز پیش کی۔ ڈاکٹر رمیش نے قومی اسمبلی میں اپنے خطاب میں ہندو تہوار دیوالی کے موقع پر ملک بھر کے ہندو ملازمین کو تنخواہ کی ایڈوانس ادائیگی کو یقینی بنانے کے ساتھ ساتھ دیوالی کو عام تعطیل قرار دینے کی ضرورت پر بھی زور دیا۔

Load More Related Articles
Load More By PHC
Load More In اردو - URDU
Comments are closed.

Check Also

پاکستان افغانستان، امن کا سفر تحریر: ڈاکٹر رمیش کمار وانکوانی

دنیا بھر میں ہر سال21ستمبر عالمی یوم امن کے طور پر منایا جاتا ہے جس کا مقصد لوگوں میں امن …