دہشت گردی کو مذہب سے نتھی نہ کیا جائے، ڈاکٹر رمیش کمار وانکوانی کا بین المذاہب ہم آہنگی کانفرنس سے خطاب

237


اسلام آباد (2 فروری2017): پاکستان ہندو کونسل کے سرپرست اعلیٰ اور ممبر قومی اسمبلی ڈاکٹر رمیش کمار وانکوانی نتھی کرنے سے غلط فہمیوں میں اضافہ ہونے کا خدشہ ہے۔ انہوں نے ان خیالات کا اظہار وزارت مذہبی امور کے زیر اہتمام دین کا حسن ، امن برداشت اور صبر و تحمل کے موضوع پر منعقدہ بین المذاہب کانفرنس کے دوران اپنے خطاب میں کیا، اس موقع پر سردار محمد یوسف وزیر مذہبی امور، صدیق الفاروق چیئرمین اوقاف بورڈ سمیت سکھ، ہندو۔ عیسائی، بہائی اور دیگر مذاہب سے تعلق رکھنے والی شخصیات بھی موجود تھیں۔

ڈاکٹر رمیش کما ر ونکوانی نے مذہبی ہم آہنگی کے حوالے سے کہا کہ میثاقِ مدینہ امن کیلئے کی جانے والی انسانی تاریخ کی اہم ترین کاوش ہے، انہوں نے کہا کہ میثاقِ مدینہ مذہبی ہم آہنگی اور غیر مسلموں کو حقوق کی فراہمی یقینی بناتا ہے۔ ڈاکٹر رمیش وانکوانی کا کہنا تھا کہ مذہبی آزادی ہر انسان کا بنیادی حق ہے، کیونکہ یہ انسان کی شخصی آزادی کی حفاظت کرتاہے جس کے تحت وہ اپنی مرضی کے مذہب و عقاعد کے مطابق اپنی ذات،اپنی سوچ، اپنی ذمہ داریوں کا احساس کرتے ہوئے آزاد زندگی گزار سکتا ہے اور اسی مناسبت سے پاکستان میں غیرمسلموں کو اپنے اپنے مذاہب کے مطابق متعلقہ قوانین کی تیاری و اطلاق کے حوالے سے پوری آزادی میسرہونی چاہیے، ڈاکٹر رمیش نے اس امر پر زور دیا کہ غیرمسلموں کے ساتھ مذہبی رواداری ہی داخلی امن و سلامتی اورباہمی ترقی و خوشحالی کا رستہ ہموار کرنے میں مدد گار ثابت ہو سکتی ہے۔

ڈاکٹر رمیش کمار کا مزید کہنا تھا کہ پاکستانی پرچم میں سفید رنگ امن کی علامت ہے اور سبز رنگ پاکستان میں بسنے والے تمام باشندوں کی نمائندگی کرتا ہے۔ انہوں نے اپنے اس موقف کو دہرایا کہ ہمیں پاکستان کے غیر مسلم عوام کہا جائے اور معاشرے سے عدم برداشت، تنگ نظری اور مذہب کی بنیاد پر تفریق جیسے عناصر کی حوصلہ شکنی کی جائے تاکہ ہم سب ایک متحد پاکستانی قوم بن کر ملکی ترقی و خوشحالی کے لیے کوشش کریں۔ ڈاکٹر رمیش نے مذہبی مقدس مقامات کی حفاظت یقینی بنانے کیلئے ٹھوس اقدامات اٹھانے کی اپیل کی، انہوں نے اپنے حالیہ دورہ کٹاس راج مندر کی حالت زار کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ کٹاس راج مندر میں بھگوان کی مورتی اور پنڈت مہاراج کی موجودگی کے بغیر مندر کی موجودگی باعث تشویش ہے۔

ڈاکٹر رمیش وانکوانی نے اعلان کیا کہ 23 مارچ کو یوم پاکستان کے موقع پر شہر قائد کراچی میں ایک عظیم الشان مذہبی ہم آہنگی کانفرنس کا انعقاد کرایا جائے گا۔
ڈاکٹر رمیش کما ر ونکوانی نے تمام مسلم علماء4 اور دیگر معزز کمیونٹی نمائندگان سے گزارش کرتے ہوئے کہا کہ وہ غیر مسلم مذہب کے نام پر شراب کے کاروبار کے خلاف جاری اپنی مہم میں تمام معزز حاضرین سے تعاون کے طلبگار ہیں۔ ہندو کمیونٹی کے مسائل کے حوالے سے ڈاکٹر رمیش نے کہا کہ سندھ میں ہندو برادری زبردستی مذہب تبدیلی اور نابالغ بچیوں کی جبری شادی جیسے گھمبیر مسائل سے دوچار ہے جس کی روک تھام کیلئے ہندو میرج ایکٹ پر عملدرآمد اور نابالغوں کے مذہب تبدیلی پر پابندی ضروری ہے۔

کانفرنس کے دیگر مندوبین میں وزیر مذہبی امور سردار یوسف، چیئرمین اوقاف بورڈ صدیق الفاروق اور دیگر سیاسی و مذہبی نمائندوں نے بھی اظہار خیال کیا، تقریب کے اختتام پر ملک بھر میں مذہبی ہم آہنگی کو فروغ دینے کیلئے متفقہ طور پر قرارداد بھی منظور کی گئی۔

Load More Related Articles
Load More By PHC
Load More In اردو - URDU

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Check Also

Beyond Crisis by Dr Ramesh Kumar Vankwani

There is much being said in the media about PIA as it is suffering from a severe crisis. T…