ڈاکٹر رمیش کمارونکوانی نے خصوصی ٹاسک فورس برائے تحفظِ غیرمسلمین کے فوری قیام کا مطالبہ دہرا دیا

442

اسلام آباد (5جنوری2017): پاکستان ہندوکونسل کے سرپرست اعلیٰ اور ممبرقومی اسمبلی ڈاکٹر رمیش کمار ونکوانی نے کوئٹہ میں مقامی ہندو تاجر کمار کے دن دہاڑے قتل کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ قیام پاکستان سے تاحال ہندو بزنس کمیونٹی ملکی معشیت کو مستحکم کرنے میں مصروف عمل ہے، المناک واقعہ ملکی ساکھ کو متاثر کرنے کی سازش ہے، ضرب عضب آپریشن کی بدولت دہشت گردی پر کافی حد تک قابو پالیا گیا ہے، دہشت گردوں کی باقیات نے اپنی موجودگی ثابت کرنے کیلئے بے ضرر امن پسند ہندو تاجر کو نشانہ بنایا ہے،
پارلیمنٹ کے باہر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے ڈاکٹر رمیش ونکوانی نے آنجہانی تاجر کے لواحقین سے اظہار تعزیت کرتے ہوئیایسے افسوسناک واقعات کا ذمہ دار معاشرے میں پائے جانے والے انتہاپسندانہ نظریات کو قرار دیا، انہوں نے کہا کہ آئینِ پاکستان غیر مسلموں کو اپنے مذہبی عقائد پر کاربند رہتے ہوئے پاکستان کی ترقی و خوشحالی کیلئے بھرپور کردار اداکرنے کی ضمانت دیتا ہے، بابائے قوم قائداعظم نے بھی قیامِ پاکستان کے بعد آزاد مملکت میں بسنے والے تمام باشندوں کو مذہبی آزادی فراہم کرنے کی یقین دہانی کروائی تھی۔
ڈاکٹر رمیش کمار نے میڈیا کے توسط سے پاکستان کی سیاسی اور سول سوسائٹی جماعتوں سے اپیل کی کہ معاشرے سے لفظ اقلیت کا استعمال ختم کرتے ہوئے تنگ نظری کا خاتمہ کریں۔ اس موقع پر ڈاکٹر رمیش کمار ونکوانی نے خصوصی ٹاسک فورس برائے تحفظِ غیرمسلمین کے فوری قیام کا مطالبہ دہراتے ہوئے کہا کہ پاکستان کو تمام مذاہب کے ماننے والوں کیلئے امن کا گہوارہ بنانا ضروری ہے۔
ڈاکٹر رمیش کمار نے قلعہ عبداللہ کے ڈپٹی کمشنر قیصر خان نصر اور صوبائی حکومت سے واقعہ کی جلد تحقیق کر کے قاتلوں کوگرفتار کرنے اور سخت سزا دینے کی بھی استدعا کی۔.

Load More Related Articles
Load More By PHC
Load More In Press Releases
Comments are closed.

Check Also

Daily Dunya (November 13, 2018)