ہم اقلیت نہیں بلکہ پاکستان کے غیر مسلم عوام ہیں،

374

اسلام آباد (3جنوری2017) پاکستان ہندو کونسل کے سرپرست اعلی اور ممبر قومی اسمبلی ڈاکٹر رمیش کمار ونکوانی نے انتخابی اصلاحات کی افادیت بیان کرتے ہوئے کہا کہ سب سے پہلے تو معاشرے سے اقلیت کے لفظ کے استعمال کی حوصلہ شکنی کی جائے،لفظ اقلیت ایک تنگ نظری پر مبنی مائنڈ سیٹ کی عکاسی کرتاہے، ملکی آئین میں بھی غیر مسلم کا لفظ استعمال کیا گیا ہے اور ہمیں پاکستان کے غیر مسلم عوام تصور کرتے ہوئے دوہرے ووٹ کا حق دیا جائے، آزاد کشمیر کی طرز پر ہم اپنے حقیقی نمائندوں کو بذریعہ دوہرا ووٹ خود منتخب کریں اور کارکردگی نہ دکھانے پر عوام کے کٹہرے میں کھڑا کر کے احتساب بھی کر سکیں۔
ان خیالات کا اظہارڈاکٹر رمیش کمار ونکوانی نے وفاقی دارالحکومت کے مقامی ہوٹل میرئیٹ میں غیر سرکاری ادارے ایس ایس ڈی او کے زیر اہتمام انتخابی اصلاحات کی ترمیم کے حوالے سے ایک سیمینار سے خطاب میں کیا۔
ڈاکٹر رمیش کمار ونکوانی نے مزید کہا کہ ہم سب پاکستانی ہیں اور ہمارے قومی پرچم میں بھی ہرا رنگ تمام قوموں کی نمائندگی کرتا ہے اور سفید رنگ امن کی علامات ہے، جس کا مطلب ہے کہ پاکستان میں تمام مذاہب کے لوگ امن کے ساتھ زندگی گزاریں، انہوں نے اپنے خطاب میں بابائے قوم قائد اعظم کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ قائد اعظم نے بھی پاکستان کی جنرل اسبملی سے اپنے خطاب میں یہی فرمایا کے پاکستان میں بسنے والے تمام مذاہب کے باشندے پاکستانی ہیں اور وہ اپنے اپنے مذہن کے مطابق زندگی گزار سکتے ہیں۔ ڈاکٹر رمیش کمار نے حالیہ انتخابی عمل کے حوالے سے کہا کہ قومی انتخابات کی صورت میں جیتنے والی سیاسی جماعتوں کی جانب سے پسند ناپسند کی بنیاد پر مخصوص نشستوں کے امیدواروں کا انتخاب کر لیا جاتا ہے ، جو غیرمسلم عوام کے بنیادی جمہوری حق کی خلاف ورزی ہے، جس کی بناء پر غیر مسلم عوام بے چینی کا شکار ہیں۔
ڈاکٹر رمیش کمارونکوانی نے کہا کہ پاکستان کی ترقی جمہوری نظام سے وابسطہ ہے اور حقیقی جمہوری نظام تب ہی پروان چڑھے گا جب پاکستان میں بسنے والے تمام باشندے اپنے ووٹ کی طاقت کا صحیح استعمال کریں گے۔
سیمینار میں مہمان خصوصی سینیٹر رضا ربانی نی سمیت پارلیمان کے دونوں .
ایوانوں اور سول سوسائٹی سے تعلق رکھنے والی شخصیات نے شرکت کی

Load More Related Articles
Load More By PHC
Load More In Press Releases
Comments are closed.

Check Also

Daily Ibrat (September 16, 2018)