کمبھ ہندو مندر پر حملہ کرنے والے شرپسند عناصر کو نشانِ عبرت بنایا جائے، ڈاکٹر رمیش کمار وانکوانی کی پریس کانفرنس،

39
کمبھ ہندو مندر پر حملہ کرنے والے شرپسند عناصر کو نشانِ عبرت بنایا جائے، ڈاکٹر رمیش کمار وانکوانی کی پریس کانفرنس، پاکستان ہندو کونسل کا سپریم کورٹ کی قائم کردہ کمیٹی پر اظہار اعتماد، ملک بھر کے نصاب تعلیم سے قابل اعتراض مواد ختم کرنے کیلئے جدوجہد میں تیزی لانے کا فیصلہ، قائداعظم کی گیارہ اگست تقریر سے اسکول بچوں کو روشناس کرایا جائے،ڈاکٹر رمیش وانکوانی کا مطالبہ

کراچی/اسلام آباد(4فروری2019ء): پاکستان ہندوکونسل نے غیرمسلم اقلیتوں کے حقوق کا تحفظ یقینی بنانے کیلئے سپریم کورٹ کی قائم کردہ کمیٹی  پر اپنے بھرپور اعتماد کا اظہارکرتے ہوئے ضلع خیرپور میں واقع ہندو مندر پر شرپسند عناصر کے حالیہ حملے کی شدید مذمت کی ہے ، سوموار کو پاکستان ہندو کونسل کے سیکرٹریٹ میں منعقدہ ایک اہم پریس کانفرنس میں سرپرست اعلیٰ اور ممبر قومی اسمبلی ڈاکٹر رمیش کمار وانکوانی نے بتایا کہ شعیب سڈل کی سربراہی میں کمیٹی 14فروری کو خیبرپختونخوا کادورہ کرے گی، 27فروری کو لاہور میں وزیراعلیٰ پنجاب سے ملاقات کی جائے گی جبکہ صوبہ سند ھ سمیت دیگر حصوں میں جاری جدوجہد میں تیزی لائی جائے گی، اس موقع پر پاکستان ہندو کونسل کے صدر گوپال، سیکرٹری جنرل سمیت دیگر عہدے داران بھی موجود تھے۔ ایک سوال کے جواب میں ڈاکٹر رمیش کمار نے کہا کہ پاکستان ہندوکونسل کو دستیاب معلومات کے مطابق آٹھویں جماعت تک کے نصاب تعلیم سے قابل اعتراض مواد ختم ہوچکا ہے، سپریم کورٹ کے احکامات کے مطابق ملک بھر کے تمام تعلیمی نصاب سے قابل اعتراض مواد ختم کیا جانا ضروری ہے، انہوں نے کہا کہ اس حوالے سے حکومت کے ساتھ جامع پالیسی کیلئے تعاون کیا جارہا ہے۔ ڈاکٹر رمیش کمار وانکوانی نے سپریم کورٹ کے24دسمبر 2018ء کے فیصلے کوہندو غیرمسلم پراپرٹی کے تحفظ کیلئے خوش آئند قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس حوالے سے 70فیصد عملدرآمد ہوچکا ہے جبکہ بقایا 30فیصد کیلئے کام جاری ہے، انہوں نے چیف سیکرٹری سندھ، آئی جی سندھ، ایڈوکیٹ جنرل سندھ اور اعلیٰ انتظامیہ کے تعاون کا شکریہ بھی ادا کیا،انہوں نے کہا کہ سپریم کورٹ کے احکامات کے تناظر میں عمل درآمدرپورٹ لینا شروع کردی گئی ہے، ڈاکٹر رمیش کا کہنا تھا کہ متروکہ وقف املاک بورڈ کے تحت غیرمسلم ہندو کمیونٹی کی جائیدادوں کی تفصیلات بھی جمع کی جارہی ہیں،انہوں نے امید ظاہر کی کہ عنقریب ملک بھر کے اقلیتوں کو لاحق مسائل پر قابو پانے پر کامیاب ہوجائیں گے۔ پریس کانفرنس کے دوران ڈاکٹر رمیش کمار وانکوانی نے سندھ کے علاقے کمبھ ، ضلع خیرپور میں واقع قدیمی ہندو مقدس مندر پر شرپسند عناصر کے حملے کی سخت الفاظ میں مذمت بھی کی، انہوں نے صحافیوں کو بتایا کہ اتوار کی شام مندر پر حملے کے دوران مقدس کتاب بھگوات گیتا اور شری گروگنتھ کو جلایا گیا ہے اور وہاں موجود کرشن مورتی کو نقصان پہنچایا گیا ہے، انہوں نے بلاسفیمی قوانین کے تحت شرپسند عناصر کے خلاف کڑی کاروائی کا مطالبہ کیا، ڈاکٹر رمیش وانکوانی کا کہنا تھا کہ ایسے ناپسندیدہ عناصر ہر ملک میں پائے جاتے ہیں، ضرورت اس امر کی ہے کہ انہیں قانون کے کٹہرے میں لایا جائے، انہوں نے بتایا کہ اس ناپاک جسارت پر پوری ہندو کمیونٹی غم و غصہ کی حالت میں ہے،اس موقع پر ڈاکٹر رمیش نے اپنی کمیونٹی کو صبر سے کام لینے کی بھی اپیل کی۔ ڈاکٹر رمیش کمار نے مزید کہا کہ صوبہ سندھ محبت کی بولی عام کرنے والے صوفیا ء کرام، سنت سادھوؤں اور علمائے حق کی دھرتی ہے، یہی وجہ ہے کہ آج بحریہ آڈیٹوریم میں منعقدہ سکول بچوں کی ایک تقریب سے اپنے خطاب میں انہوں نے قائداعظم کی گیارہ اگست کی تقریر کو نصاب تعلیم کا حصہ بنانے اور عمل کرنے کی ضرورت پر زور دیا ہے، پریس کانفرنس کے اختتام پر ڈاکٹر رمیش وانکوانی نے ایک مرتبہ پھر مقدس مذہبی مقامات کو نشانہ بنانے والوں کو نشانِ عبرت بنانے کا مطالبہ کیا۔
**********

Load More Related Articles
Load More By PHC
Load More In Press Releases
Comments are closed.

Check Also

Dawn – March 10, 2021