وقت ثابت کرے گا کہ راون نہیں رام ہوں، ڈاکٹر رمیش کمارونکوانی

630

کراچی (13نومبر2015ء): پاکستان ہندوکونسل کے سرپرستِ اعلیٰ اورمسلم لیگ (ن) کے ممبرقومی اسمبلی ڈاکٹر رمیش کمارونکوانی نے پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹوکے حالیہ بیان کی سخت الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ 19نومبر کے بلدیاتی انتخابات میں ضلع تھرپارکر میں بسنے والی دس لاکھ اقلیتی کمیونٹی ثابت کر دے گی کہ ڈاکٹر رمیش کمار ونکوانی راون نہیں بلکہ رام ہے۔وہ سندھ ہائی کورٹ کے باہر ہندو بچی سیمااوڈھ کیس میں سماعت کے بعد میڈیا سے گفتگو کررہے تھے، جسٹس نعمت اللہ کی سربراہی میں دورکنی بینچ نے ڈٖاکٹر رمیش کمار کے دلائل سننے کے بعد ہندو بچی سیما کو شیلٹر ہوم بھجواکر میڈیکل رپورٹ کیلئے سول ہسپتال ریفر کردیا، کیس کی آئندہ سماعت 25نومبر کوہوگی،گزشتہ دو ماہ میں ڈاکٹر رمیش ونکوانی نے کم سن ہندوبچیوں کے جبری مذہب تبدیلی سے متعلق 38کیس داخل کیے ہیں۔ ڈاکٹر رمیش ونکوانی کا دورانِ سماعت کہنا تھا کہ غلط میڈیکل رپورٹ فراہم کرنے والے ڈاکٹروں کے خلاف بھی سخت ایکشن ہونا چاہیے جبکہ وکلاء برادری بھی معاشرے میں فساد پھیلانے والے عناصر کی پیروی سے اجتناب کرے۔بعد ازاں صحافیوں سے گفتگو میں ایک سوال کے جواب میں ن لیگی راہنماء ڈاکٹررمیش نے کہا کہ انہیں ضلع تھرپارکر کی محب وطن اقلیتوں کا بھرپور اعتماد حاصل ہے ،تھرپارکر کے عوام 19نومبر کے بلدیاتی انتخابات میں کلین سویپ کرکے اپنے محبوب قائد وزیراعظم نواز شریف کی خدمت میں انمول تحفہ پیش کرنے کو بے تاب ہیں، پیپلز پارٹی نے بلدیاتی انتخابات میں اپنی شکست یقینی دیکھ کر بلاول بھٹو کو میدان میں اتارا ہے، حمیر سنگھ جو اپنے ہی حلقے عمرکوٹ سے اپنے بیٹے کو نہیں کامیاب کراسکا وہ اب علاقے تھرپارکر میں کیا تیر مار لے گا ، ملک بھر کی اقلیتوں کا ڈاکٹرمیش کمارپر اعتماد ثابت کرتا ہے کہ اقلیوں کے حقوق کے تحفظ کی انتھک جدوجہد کرنے والاحمیرسنگھ، مہیش مہلانی نہیں بلکہ ڈاکٹر رمیش کمار ونکوانی ہے، آج تھرپارکرکے عوام کو بھی یقین دہانی کراتا ہوں جیسے میں اپنی اقلیت برادری کے حقوق کیلئے لڑتا ہوں اسے ہی کہیں زیادہ جذبے سے تمام عوام بلاتفریق مذہبی وابستگی مسلم لیگی لیڈر ارباب غلام رحیم سے مل کرخدمت کروں گااور تھر کی پسماندگی دور کرتے ہوئے جدید سہولیات سے آراستہ ایک ماڈرن علاقہ بنانے کیلئے جدوجہد جاری رکھوں گا، جن میں تعلیم، پانی ، ٹیلی کام کی فراہمی سرفہرست ہوں گی۔

Load More Related Articles
Load More By PHC
Load More In اردو - URDU
Comments are closed.

Check Also

Daily Jang-January 10, 2019